• سکندر اعظم کی یادگار (Alexander Monument)
  • سکندر اعظم کی یادگار (Alexander Monument)
  • سکندر اعظم کی یادگار (Alexander Monument)
  • سکندر اعظم کی یادگار (Alexander Monument)
  • سکندر اعظم کی یادگار (Alexander Monument)
  • سکندر اعظم کی یادگار (Alexander Monument)
Spread the love

سلسلہ کوہ نمک پنجاب میں سطح مرتفع پوٹھوہار میں واقع ایک پہاڑی سلسلہ ہے جس کی وجہ معرفت یہاں موجود نمک کے ذخائر ہیں- سلسلہ کو ہءنمک برجوں اور قلعوں کی ایک یادگار کی حیثیت رکھتا ہے- اس علاقے کے نواح میں موجود مندر اور قلعے قدیم باقیات کے اچھوتے مظاہر ہیں-

مقدونی فاتح سکندر اعظم کا اس پہاڑی سلسلے سے دو بار گزر ہوا، پہلی بار ٹیکسلا اور دوسری مرتبہ جب سکندر اعظم کی افواج نے دریائے بیاس کے کنارے سے مزید آگے بڑھنے سے انکار کیا- یہیں سے سکندر اعظم نے بابل کے سفر پر بحیرہ عرب کی جانب مارچ کیا- آجکل یہاں ایک غیر سرکاری تنظیم سکندر اعظم کی یادگار تعمیر کر رہی ہے-
علاقے میں آنے والے نئے افراد کے لیے یہ پتھریلا، بنجر پہاڑی سلسلہ پہلی نظر میں کچھ غیر متاثرکن ہے پر درحقیقت سلسلہ کوه نمک عجائبات، رومانوی کہانیوں، آثار قدیمہ کی باقیات اور مختلف ارضیاتی بناوٹوں کے باعث مسحور کن ہے- یہاں کا سفر دلچسپ ہی نہیں بلکہ معلوماتی بهی ہے- ہریال جیسے نایاب نسل کے جانور کی موجودگی سلسلہ کوہ نمک کو مزید اہم بنا دیتی ہے-
رسول بیراج سے دریائے جہلم پار کرنے کے بعد آپ Rasool Barrage Wildlife Sanctuary پہنچ جاتے ہیں جہاں ہر طرف سرسبز وادیاں اور lotus سے مزین جھیلیں ہیں- ساءبیرین مہمان پرندے کرین، سٹروک اور مقامی سیاه پنکھ Stilt یہاں عام طور پر دیکھے جاتے ہیں- دریائے جہلم کے مسری بس سٹاپ سے مغرب کی جانب مڑتے ہوئے آپ جلال پور قصبہ میں داخل ہو جاتے ہیں جہاں آپ جہلم سے بھی پہنچ سکتے ہیں – لہٰذا آپ بذریعہ رسول بیراج یہاں تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں-
ماضی میں دریائے جہلم کے بھرپور بہاءو کے برعکس اب یہ دریا زیادہ تر خشک رہتا ہے اور یہاں کا پانی Strategic Water Management کے تحت رسول بیراج میں منتقل کر دیا جاتا ہے۔

جلال پور شریف کے مقابل ایک گاؤں مونگ آباد ہے- تاریخ کے مطابق یہ وہ علاقہ ہے جہاں سکندر اعظم معرکہء ہند کے موقع پر ہندوستان کے راجہ پورس کے مقابل آیا- مونگ راجہ پورس کی چوکی کی حیثیت رکھتا تھا جہاں پورس کے 30000 افواج، 2000گهڑسوار اور 200 ہاتهی کا لشکر مقدونی فاتح سکندر اعظم سے مقابلے کے لیے تیار کهڑا تها-

پنڈ دادنخان کے دائیں جانب سلسلہ کوہ نمک کے درمیان موجود قدیم شہر جلال پور کو سکندر اعظم نے اپنے جنرل کی یاد میں آباد کیا- یہاں موجود کھنڈرات کی باقیات سے ملنے والے سکوں کا سلسلہ یونان و باختری دور زمانہ سے ملتا ہے- یہاں قدیم دیواروں کی باقیات اب بھی موجود ہیں جن کی اونچائی موجودہ جلالپور کے مقابلے میں 1000 فٹ اونچی ہیں- یہاں سکندر اعظم کی یاد گار اور ریسرچ سنٹر تعمیل کیا گیا یے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *